Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / صعنت و تجارت / کپاس پر پتا مروڑ وائرس کی بیماری کا حملے کا خدشہ، کسان حکمت عملی اپنائیں،ترجمان محکمہ زراعت

کپاس پر پتا مروڑ وائرس کی بیماری کا حملے کا خدشہ، کسان حکمت عملی اپنائیں،ترجمان محکمہ زراعت

فیصل آباد(بیورو رپورٹ )ترجمان محکمہ زراعت پنجاب ریسرچ انفارمیشن یونٹ فیصل آباد نے کاشتکاروں کو کہا ہے کہ موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے کپاس پر پتا مروڑ وائرس کی بیماری کا حملہ مشاہدہ میں آرہا ہے جس کے موثر تدارک کے لیے حکمت عملی کواپنانا انتہائی ضروری ہے تاکہ اس کے اثرات کو کم کیا جا سکے اور فصل سے بہتر پیداوار حاصل کی جا سکے۔ ترجمان نے مزید کہا کہ کپاس کی فصل میں موجود جڑی بوٹیوں کو تلف کیا جائے۔ اکثر جڑی بوٹیاں کھیت کے ارد گرکھالوں اور وٹوں پر پائی جاتی ہیں ان کا تلف کرنا بھی اشد ضروری ہے۔ کپاس کے علاوہ یہ بیماری / وائرس متبادل میزبان فصلوں مثلاً بھنڈی، تمباکو، بینگن، توری، ٹماٹر، مرچ، بیر اور جڑی بوٹیوں مثلاً اٹ سٹ، مکو، لہیہ، کرنڈ، ہزار دانی، کُٹھ کندا، سن ککڑا، اک، سکلائی پر بھی پائی جاتی ہے لہٰذا ان جڑی بوٹیوں کا تلف کرنا و دیگر میزبان پودوں پر سفید مکھی کا کنٹرول بھی انتہائی ضروری ہے۔ وائرس کے حملے کے آغاز میں کھادوں کے متوازن استعمال خاص طور پر پوٹاشیم کے استعمال سے وائرس کے اثرات کم کیے جا سکتے ہیں۔ترجمان نے مزید کہا کہ میگنیشیم سلفیٹ بحساب 300 گرام، پوٹاشیم نائٹریٹ 200 گرام، زنک سلفیٹ 200 گرام اور بوریکس 200 گرام فی ایکڑ 100 لٹر پانی میں حل کر کے تین سپرے بوائی کے بعد بالترتیب 60، 75 اور 90 دن پر کرنے سے بیماری کے اثرات کو کم کیا جاسکتا ہے۔ پتہ مروڑ وائرس کے پھیلاﺅ میں سفید مکھی اہم کردار ادا کرتی ہے لہٰذا سفید مکھی کے موثر تدارک اشد ضروری ہے

About Admin

Check Also

dollars

بیرون ملک کرنسی لے جانے کی حد 3 ہزار ڈالر کرنے پر غور

اسلام آبا(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی حکومت کی جانب سے منی لانڈرنگ اورٹیررازم فنانسنگ کی روک تھام …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: