Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / اہم ترین / نیو اسلام آباد ایئرپورٹ پورٹ منصوبے پر ایک سو چھ ارب روپے خرچ ہو گئے لیکن تاحال تعمیراتی کام جاری ہے،چیف جسٹس

نیو اسلام آباد ایئرپورٹ پورٹ منصوبے پر ایک سو چھ ارب روپے خرچ ہو گئے لیکن تاحال تعمیراتی کام جاری ہے،چیف جسٹس

-اسلام آباد(بیورو رپورٹ)سپریم کورٹ نے نیو اسلام آباد ایئرپورٹ پورٹ پر پانی کھڑا ہونے سے متعلق ازخود نوٹس نمٹاتے ہے قرار دیا ہے کہ حکومت ائیر پورٹ کے ڈیزائن کے معاملے کو دیکھے اور اگر ممکن ہو تو ڈیزائن میں تبدیلی لائی جائے جبکہ عدالت نے انتظامیہ کو حکم دیا ہے کہ یقینی بنایا جائے کہ آئیندہ ائیر پورٹ پر پانی نہ کھڑا ہو، چیف جسٹس نے کا کہنا تھا کہ منصوبے پر ایک سو چھ ارب روپے خرچ ہو گئے لیکن تاحال تعمیراتی کام جاری ہے، منصوبے کی لاگت میں اضافے کی زمہ داری کوئی قبول نہیں کرے گا باز پرس کی جائے تو زمہ داری ایک دوسرے پر ڈال دی جاتی ہے، منگل کے روز نیو اسلام آباد ائیر پورٹ میں بارش کا پانی کھڑا ہونے سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی، ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے بتایا کہ نئے ائیر پورٹ پر بارش کا پانی کھڑا ہونے کی رپورٹ پیش کر دی ہے، بارش کا پانی ائیر پورٹ کی انٹری جگہ پر آیا، انٹری جگہ پر پارکنگ کی جگہ ہے، چیف جسٹس نے کہا کہ ائیر پورٹ کا ڈیزائن کا ایشو ہے تو ہمارا کام نہیں ہے ، ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ تیز بارش اور ہوا کی وجہ سے پانی انٹری پوائنٹ کی جگہ پر گیا، جسٹس عمر عطابندیال نے کہا کہ یہ بتا دیں کہ بارش کا پانی ائیر پورٹ کے اندر آیا، بارش کا پانی ایٹیریم کے اوپر تک آیا ، چیف جسٹس نے کہا کہ ائیر پورٹ کی تعمیر پر لاگت کتنی آئی، سول ایوی ایشن حکام نے عدالت کو بتایا کہ ائیر پورٹ پر 106 ارب کی لاگت آئی،چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ ائیر پورٹ کی تعمیر کی اصل ابتدائی لاگت کیا تھی، سول ایوی ایشن حکام نے عدالت کو بتایا کہ ابتدائی لاگت 37 ارب روپے تھی، اس پر چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ تعمیر کی لاگت اتنی بڑھ جانے کا زمہ دار کون ہے، باز پرس کریں تو معاملہ دوسروں پر ڈال دیا جاتا ہے،106ارب روپے خرچ ہو گئے تاحال تعمیرات کا سلسلہ جاری ہے، چیف جسٹس نے کہا کہ بار بار کہا جاتا ہے ائیر پورٹ چوہدری منیر نے بنایا، چوہدری منیر نے صرف رون وے بنایا تھا، بلا وجہ کسی شہری کو بدنام نہیں کرنا چاہیے، ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ پارکنگ ایریا میں پانی جمع ہوا تھا، بورڈنگ جاری کرنے والے کاو¿نٹر کے پاس پانی جمع نہیں ہوا، اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ پارکنگ بھی ائیر پورٹ کا حصہ ہوتی ہے، ہم نے ڈیزائن نہیں تعمیرات کا جائزہ لینا ہے، ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ زیر تعمیر حصے میں پانی زیادہ جمع ہوا تھا، بعد ازاں عدالت کا کہنا تھا کہ ائیر پورٹ انتظامیہ ڈیزائن کے معاملے کو دیکھے ، ممکن ہو تو ڈیزائن میں تبدیلی بھی کی جائے،عدالت نے نیو اسلام آباد ائیر پورٹ پر پانی کھڑا ہونے سے متعلق ازخود نوٹس نمٹا تے ہوئے حکم دیا کہ یقینی بنایا جائے کہ مستقبل میں ائیر پورٹ پر پانی کھڑا نہ ہو

About Admin

Check Also

بھارتی آرمی چیف بھارتیہ جنتا پارٹی کے آلہ کار نہ بنیں، فوادچوہدری

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ بھارتی آرمی چیف کو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: