Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / اہم ترین / سپریم کورٹ نے پی آئی اے کے سربراہ مشرف رسول کو وکیل کرنے کی مہلت د یدی

سپریم کورٹ نے پی آئی اے کے سربراہ مشرف رسول کو وکیل کرنے کی مہلت د یدی

اسلام آباد(بیورو رپورٹ)سپریم کورٹ نے پی آئی اے کے سربراہ مشرف رسول کو اپنی تعیناتی کے معاملے پر سوموار تک وکیل کرنے کی مہلت دیتے ہوئے حکم دیا ہے کہ وکیل کی فیس پی آئی اے نہیں بلکہ مشرف رسول خود ادا کریں، چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ مشرف رسول کی تعیناتی بظاہر اقرباپروری ہے، سی ای او کے لیے پچیس سالہ تجربے ضروری ہے، یہ تو سیدھا سیدھا نیب کا کیس ہے، منگل کے روز پی ائی اے کی نجکاری سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی، دوران سماعت چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ پی ائی اے کیس کو بہت سنجیدگی سے لے رہے ہیں، گزشتہ دس سال کی آڈٹ رپورٹ کا انتظار ہے، پی آئی کی جانب سے وکیل نعیم بخاری عدالت میں پیش ہوے تو چیف جسٹس نے کہا کہ پی ائی اے اتنی بھاری فیس پر وکیل کیوں کررہی ہے؟ چیف جسٹس نعیم بخاری کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ بخاری صاحب آپ نے شاید کیس مفت لیا ہو، نعیم بخاری نے کہا کہ میں فیس ڈیم فنڈ میں دینے کے لیے لے رہا ہوں، جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ مشرف رسول کی تعیناتی میں قوانین کی دھجیاں اڑائی گئیں، چیف جسٹس نے نعیم بخاری سے کہا کہ بخاری صاحب اگر اپ وکیل ہیں تو آئیندہ کابینہ کیسے تعیناتی کا جائزہ لے گی، نعیم بخاری کی عدالت میں کارکردگی اچھی نہ ہوتی تو اج بہت کچھ ویسا نہ ہوتا جیسا ہے، چیف جسٹس نے کہا کہ بار بار مشرف رسول نے عدالت کو دھوکا دیا، شمالی علاقہ جات جانے والوں سے 32 ہزار وصول کیے جاتے ہیں، گلگت بلتستان کے عوام چاہتے ہیں پی ائی اے کا کرایہ کم ہوں، چیف جسٹس نے کہا کہ پی ائی اے آڈٹ رپورٹ میں کرپشن کی نشاندہی ہو گی، ایک معاملہ پی ائی اے کے سی ای او کی تعیناتی کا بھی ہے، مجھے بتایا گیا کہ ائیر لائن سے براہ راست 14 لاکھ تنخواہ بھی وصول کرتے ہیں، بعد میں علم ہوا کہ پی ائی اے سربراہ کی تنخواہ بیس لاکھ ہے، عدالت کیساتھ تنخواہ کے معاملے پر غلط بیانی کی گئی، پی آئی اے کے سربراہ مشرف رسول اور سابق مشیر ہوا بازی سردار مہتاب عدالت میں پیش ہوے تو چیف جسٹس نے سردار مہتاب کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ عباسی صاحب آپ نے بہت ڈھونڈ کر مشرف رسول کو لگایا، بڑوں بڑوں کو قابو کر لیا مشرف رسول قابو نہیں آ سکے، پہلے مشرف رسول کی تعیناتی کے خلاف درخواست سنیں گے، درخواست گزار نے کہا کہ مہتاب عباسی سے قریبی تعلق پر مشرف رسول کو تعینات کیا گیا، چیف جسٹس نے کہا کہ بظاہر مشرف رسول کی تعیناتی اقربا پروری ہے، درخواست گزار نے کہا کہ مشرف رسول مطلوبہ تعلیمی قابلیت پر بھی پورا نہیں اترتے، جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ بیان حلفی اور میٹرک کے سرٹیفکیٹ پر مشرف رسول کی عمر میں فرق ہے، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ سی ای او کے لیے پچیس سالہ تجربے ضروری ہے، یہ تو سیدھا سیدھا نیب کا کیس یے، نیب حکام نے عدالت کو بتایا کہ ڈی جی نیب راولپنڈی نے انکوائری شروع کر دی ہے، مشرف رسول نے عدالت سے استدعا کی کہ مجھے وکیل کرنے کا موقع دیا جائے،جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ وکیل کرنے تک آپ کو معطل کر دیتے ہیں، مہتاب عباسی سے آپ کا کیا تعلق ہے، آپ بار بار عدالت کو دھوکہ دیتے ہیں، مشرف رسول نے کہا کہ میرا مہتاب عباسی سے کوئی تعلق نہیں ہے اس پر چیف جسٹس نے مشرف رسول کو سوموار تک وکیل مقرر کرنے کا حکم دیدتے ہوے کہا کہ ،وکیل کی فیس پی آئی اے نہیں آپ خود دیں گے، عدالت نے مشرف رسول کی تعیناتی کے خلاف دائر درخواست پر سماعت پیر تک ملتوی کردی

About Admin

Check Also

مبینہ دھاندلی کی تحقیقات، حکومت کا کمیٹی کی سربراہی خود کرنیکا فیصلہ

اسلام آباد: (دنیا نیوز) حکومت نے عام انتخابات 2018ء میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کیلئے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: