Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / بین الاقوامی / حریت قائدین کی جانب سے 8 جولائی کو برہان وانی کی یاد میں ہڑتال کی اپیل

حریت قائدین کی جانب سے 8 جولائی کو برہان وانی کی یاد میں ہڑتال کی اپیل

سرینگر(فارن ڈیسک) حریت قائدین سید علی گیلانی ، میرواعظ ڈاکٹر محمد عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے 2016 کی عوامی تحریک کے دوران شہید برہان مظفر وانی سمیت 126 شہداءکے علاوہ مزاحمتی تحریک کے دوران آج تک کے جملہ شہداءکو خراج عقیدت ادا کرنے کے لئے آج ( جمعہ کو ) تمام ائمہ مساجد سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اس روز اپنے جملہ شہداءکی یاد میں دعائیہ مجالس کا انعقاد کیا جائے اور ان شہداءکے ایصال ثواب کے لئے اجتماعی فاتحہ پڑھی جائے جبکہ 8 جولائی کو ریاست گیر ہڑتال کی ہڑتال کی جائے اور اس روز قصبہ ترال میں شہید برہان مظفر وانی کے آبائی مزار شہداءپر جملہ شہدائے کشمیرکے حق میں خراج عقیدت ادا کرنے کے لئے ایک امی اجتماع منعقد کیا جائے دریں اثناءحریت قائدین نے بھارت کے وزیر اعظم نریندر مودی کے حالیہ بیان کو حقیقت سے بعید قرار دیتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے ایسے بے بنیاد اور غیر اہم بیانات داغنا بھارت کی سیاست قیادت کی غیر سنجیدگی کا عکاس اور واضح ثبوت ہے ۔ مزاحمتی قیادت نے مسئلہ کشمیر کو ڈیڑھ کروڑ انسانی آبادی پر مشتمل ایک قوم کی تقدیر سازی کے لئے حق خودارادیت کی واگزاری کا مسئلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ریاستی عوام کی مرضی کے مطابق مسئلہ کشمیر کے آبرومندانہ حل کے بعد ریاستی عوام اپنی حکومت قائم کر کے عالمی سطح پر خود احتسابی اور تعمیر و ترقی کا ایک قابل تقلید نمونہ پیش کرنے کی اہلیت اور قابلیت کا لوہا منوا سکتے ہیں مزاحمتی قیادت نے بھارت کی طرف سے ریاست پر 1947 کے قبضے کے نتیجے میں پچھلے 70 برسوں کے معاشی ، سیاسی اور سماجی استحصال پر افسوس کرتے ہوئے کہ اکہ مسئلہ کشمیر کو حکومت سازی کا مسئلہ قرار دینا بھارتی وزیر اعظم کی طرف سے برصغیر ہندو پاک کی تازہ ترین تاریخ سے حددرجہ ناواقفیت کا نتیجہ ہے مزاحمتی قیادت نے فوجی طاقت کے نشے اور فتور میں مبتلا بھارتی قیادت کی طرف سے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے جان بوجھ کر چشم پوشی کا ارتکاب کرنے کے پچھلے 70 برسوں کے دوران کشمیری قوم کی عظیم اور بے مثال قربانیوں کے ساتھ ایک بھونڈا مذاق قرار دینے سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ کشمیری قوم نے آج تک 6 لاکھ انسانی نفوس کی شہادتیں ، کھربوں روپے مالیت کی تلف شدہ جائیدادوں ، عفت مآب خواتین کی لٹی عصمتوں ، انٹروگیشن مراکز میں لاکھوں قیدیوں کو ناقابل بیان حد تک تشدد اور جسمانی ایذار رسانیوں کو بھارت کے فوجی قبضے کے تحت کسی اچھی حکومت اور خود احتسابی کے لئے بطور قربانیوں کے پیش نہیں کیا گیا ہے مزاحمتی قیادت نے بھارت کے وزیر اعظم کو ریاست جموں و کشمیر کی معاشی تاریخ کا مطالعہ کرنے کی صلح دیتے ہوئے کہا کہ آج سے دو سو سال پہلے ریاست جموں و کشمیر کے لوگوں کا معیار زندگی بھارت کے تمام راجوڑوں سے بدرجہا بہتر اور بیشتر یورپی ممالک کے ہم پلہ تھا اور آج اگر ریاست جموں وکشمیر کے لوگوں کو معاسی اعتبار سے بیروزگاری ، غربت اور دیگر مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے تو اس کے لئے صرف اور صرف بھارت کی طرف سے ریاستی عوام کے گردنوں پر استحصالی حکمرانوں کو سوار کرنے کی وجہ ذمہ دار ہے ۔

About Admin

Check Also

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف شٹر ڈاؤن ہڑتال

سرینگر(مانیٹرنگ ڈیسک) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے ہاتھوں کشمیری نوجوانوں کی شہادت پر آج …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: