Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / صحت / خون کے قطرے سے مرض کی شناخت کرنے والی ڈبہ نما تجربہ گاہ

خون کے قطرے سے مرض کی شناخت کرنے والی ڈبہ نما تجربہ گاہ

اونٹاریو: ماہرین نے جوتے کے ڈبے کی جسامت کی ایک دستی تجربہ گاہ بنائی ہے جو خون کے ایک قطرے سے کئی امراض شناخت کرسکتی ہے۔
ڈبے نما چھوٹی سی لیبارٹری دوردرازعلاقوں اورپسماندہ خطوں میں کئی امراض کی کامیاب نشاندہی خون کے ایک قطرے سے کرسکتی ہے، یہاں تک کہ اس سے خسرے اورریوبیلا کی اینٹی باڈیز بھی شناخت کرسکتی ہے۔ اسے ایم آر باکس کا نام دیا گیا ہے جس میں ایم کا مطلب میزلس اور آر کا مطلب ریوبیلا ہے لیکن اسے دیگرامراض کی شناخت کےلیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ اس میں ایک اہم چپ کو انک جیٹ پرنٹرز اور تھری ڈی پرنٹنگ مشینوں سے کم خرچ میں تیار کیا گیا ہے۔
ابتدائی طور پر اس باکس لیب کو کینیا میں پناہ گزینوں کے ایک کیمپ میں آزمایا گیا ہے جہاں بچوں اور بڑوں میں اس کی افادیت نوٹ کی گئی، تاہم اس کے تخلیق کاروں نے کہا ہے کہ بہت جلد ڈبہ لیبارٹری میں تبدیلیاں لاکر اسے کئی امراض کی شناخت کےلیے بھی استعمال کیا جاسکے گا۔ اس طرح یہ تجربہ گاہ ان امراض کی وبا پھوٹنے یا تحقیق کی صورت میں لاتعداد جان بچانے میں کام آئے گی۔
کسی مرض کی اینٹی باڈی کی شناخت کا مطلب یہ ہے کہ آیا وہ شخص پہلے اس مرض کا شکار ہوا ہے یا پھراس مرض کے خلاف ویکیسن لگوا چکا ہے۔ اس طرح کسی علاقے میں اس مرض کی وبا کو سمجھنے میں بہت مدد ملتی ہے۔ اس چھوٹی سی لیبارٹری کے ذریعے بہت کم خرچ میں خسرے کے سیمپل 86 فیصد اور ریوبیلا کی 91 فیصد کامیابی سے شناخت کئے گئے ہیں۔ یعنی پہلے نمونوں کو اس آلے سے شناخت کیا گیا اور پھر انہی نمونوں کو ایک باقاعدہ لیبارٹری میں بھیجا گیا تھا۔ اس طرح دونوں کے نتائج میں بہت کم فرق دیکھا گیا تھا۔
واضح رہے کہ یہ دونوں امراض وبا کی صورت میں پھیلتے ہیں اور ان کا نوالہ عموماً غریب عوام بنتے ہیں جہاں طبی سہولیات عموماً کئی گھنٹوں کی مسافت پر ہوتی ہیں۔ اس طرح فوری طور پر ہزاروں لاکھوں افراد کی جانیں بچانا ممکن ہوگا۔ دنیا بھر میں لاکھوں کروڑوں متاثرین دربدر ہیں۔
ہر سال خسرے کا وائرس 134,000 افراد کی جان لیتا ہے جبکہ ایک لاکھ بچے ریوبیلا سے متاثر ہوکر کسی نہ کسی عیب کے ساتھ پیدا ہوتے ہیں اور ان دونوں امراض کو ویکسین کے ذریعے ٹالا جاسکتا ہے۔

About Admin

Check Also

ایک گھنٹے میں جراثیم شناخت کرنے والی اسمارٹ فون ایپ

سانتا باربرا(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی ماہرین نے 100 ڈالر کی ایک اسمارٹ کٹ اور ایپ تیار …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: