Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / پاکستان / لاہور جلسے میں ایک دوسرے پر لعنتیں بھیجنے والے لعنتی اکٹھے تھے، رانا ثنااللہ

لاہور جلسے میں ایک دوسرے پر لعنتیں بھیجنے والے لعنتی اکٹھے تھے، رانا ثنااللہ

فیصل آباد: وزیرِقانون پنجاب رانا ثنااللہ کا کہنا ہے کہ طاہرالقادری کے جلسے میں ایک دوسرے پر لعنتیں بھیجنے والے سارے لعنتی اکٹھے تھے۔
فیصل آباد میڈیا سے بات کرتے ہوئے صوبائی وزیرقانون راناثناءاللہ کا کہنا تھا کہ اپوزیشن جماعتیں انتشار کی سیاست کررہی ہے، افراتفری، انتشار اور عدم استحکام ان کا ایجنڈا ہے، ساڑھے 4 سال میں ان سب کے پاس کوئی ایشو نہیں تھا، لاہور میں ہونے والے جلسے میں بھی انہوں نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کو موضوع بنا کر اپنی اپنی سیاست چمکائی اور جلسے میں ایک دوسرے پر لعنتیں بھیجنے والے سارے لعنتی اکٹھے تھے، ان کا کام ڈیڈ لائن پہ ڈیڈ لائن دینا ہے۔
رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ جلسے میں عمران خان اور شیخ رشید نے پارلیمنت پر لعنت بھیجی، لیکن حقیقت یہ ہے کہ مال روڈ کی خالی کرسیاں ان پر لعنت بھیج رہی تھیں جب کہ ان کے اس بیان کے جواب میں اب 21 کروڑ عوام ان پر لعنتیں بھی رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کا آئین اور پارلیمنٹ ہمیشہ سرخرو ہوگی، اس ملک میں قانون و آئین اور جمہوریت بھی رہے گی، شیخ رشید کو چاہئے کہ وہ اب اپنی توجہ انتخابات پر دیں ابھی ان کے پاس وقت ہے، اگر اس بار انہیں عوام نے مسترد کردیا تو انہیں دھاندلی کا شور مچانے کا بھی موقع نہیں دیں گے، 2018 کے انتخابات میں ایک طرف انتشار اور دوسری طرف ترقی کی سیاست کھڑی ہوگی خیر کی قوتیں کامیاب ہوں گی اور شر وانتشار کی قوتیں ناکامی کا منہ دیکھیں گی۔
سپریم کورٹ کے حمزہ شہباز کے گھر کے باہر سے بیرئیرز ہٹانے کے حکم پر وزیرقانون کا کہنا تھا کہ کوئی عام شہری رکاوٹیں یا بیریئرز نہیں لگا سکتا یہ کام پولیس کا ہے، کسی کی جان کو خطرہ ہوتو پولیس رکاوٹیں کھڑی کرسکتی ہے اور موجودہ وقت میں شریف خاندان کے ہرفرد کی جان خطرے میں ہے اگر چیف جسٹس مناسب سمجھیں تو اس حوالے سے تمام رپورٹیں عدالت میں پیش کرسکتے ہیں۔ حمزہ شہباز کے حوالے سے چیف جسٹس کے ریمارکس پر افسوس ہوا، ایسے ریمارکس سیاستدانوں کے بارے میں نہیں ہونے چاہئے۔
زینب قتل کیس کے حوالے سے رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ کیس کی تفتیش تمام ایجنسیاں کررہی ہیں جن میں پولیس سمیت سول و عسکری ایجنسیز بھی شامل ہیں، اب تک 800 سے زائد افراد کا ڈی این اے لیا جاچکا ہے ہمیں پوری امید ہے کہ زینب کے قاتل درندے کو کیفرِکردار تک پہنچایا جائے گالیکن اس کے لئے پولیس کی حوصلہ شکنی کے بجائے حوصلہ افزائی کی ضرورت ہے۔

About Admin

Check Also

اپوزیشن کا اختلاف کسی اصول پر ہونا چاہئے، وزیراعظم

گلگت: وزیرِاعظم شاہدخاقان عباسی کا کہنا ہے کہ اختلاف رائے سب کاحق ہوتا ہے، لیکن …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: