Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / پاکستان / کراچی کےشہریوں کیلیے سانس لینے کی جگہ بھی نہیں چھوڑی گئی، سپریم کورٹ

کراچی کےشہریوں کیلیے سانس لینے کی جگہ بھی نہیں چھوڑی گئی، سپریم کورٹ

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)کراچی میں نالوں پر تجاوزات کے معاملے پر سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہر کو تباہ کردیا گیا اور شہریوں کے لیے سانس لینے کی بھی جگہ نہیں چھوڑی گئی۔

سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں نالے کی صفائی اور حدود کے تعین سے متعلق کے ایم سی کی درخواست کی سماعت ہوئی۔ اس موقع پر عدالت نے کراچی کا اصل ماسٹر پلان پیش نہ کرنے پر سخت برہی کا اظہار کرتے ہوئے سینئر ڈائریکٹر ماسٹر پلان محمد سرفراز خان سے استفسار کیا کہ آپ کراچی کے ساتھ کر کیا رہے ہیں، شہریوں کے لیے سانس لینے کی بھی جگہ نہیں چھوڑی، جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کراچی کو کیا اب شہر کہلانے کا لائق چھوڑا ہے۔

عدالت نے ریمارکس میں کہا کہ یہاں سے آپ کو سیدھا جیل بھیج دیتے ہیں، کیا اس لیے آپ کو مراعات اور تنخواہیں ملتی ہیں، شہر کو تباہ کردیا گیا اور نالے بند پڑے ہیں جب کہ اب نالوں پر تجاوزات قائم کرکے شہر کو مکمل ڈبونے کا پلان کر رہے ہیں، زرا سی بارش نے شہر کو ڈبو دیا مگر کسی نے کچھ سیکھا نہیں۔ عدالت نے ریمارکس دیے کہ شہر کو ان اداروں کے حوالے نہیں کرسکتے، شارع فیصل سمیت کوئی سڑک سفر کرنے کے قابل نہیں جب کہ  شہر کے گٹر اب بھی بھرے ہوئے ہیں، عدالتی ریمارکس پر ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ 10 فٹ نالہ اور اطراف میں سڑک اب بھی موجود ہے جب کہ سینئر ڈائریکٹر ماسٹر پلان کا انکشاف کیا کہ نالے کی اصل چوڑائی 35 فٹ ہے، مارکیٹیں بنانے کی منظوری ایس بی سی اے نے خلافِ قانون دی۔

عدالت نے کراچی کا اصل ماسٹر پلان طلب کرتے ہوئے نالے کی اراضی پر قائم ہر قسم کی تجاوزات کے خاتمے کا حکم دیا ہے۔

About Admin

Check Also

آرمی چیف سے ایرانی چیف آف جنرل اسٹاف جنرل باقری کی ملاقات

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ سے ایرانی چیف آف جنرل اسٹاف میجر …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: