Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / اہم ترین / نیب ریفرنسز: احتساب عدالت میںلیگی وکلا کی ہلڑ بازی

نیب ریفرنسز: احتساب عدالت میںلیگی وکلا کی ہلڑ بازی

اسلام آباد(نیوز رپورٹر)احتساب عدالت میں لیگی وکلا کی ہلڑ بازی کے باعث جج محمد بشیر نے کارورائی کیے بغیر ہی سماعت ملتوی کردی جس کےباعث نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی۔ جمعہ کے روز مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر جوڈیشل کمپلیکس کے باہر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے جس کے باعث جوڈیشل کمپلیکس کے باہر ایک بار پھر بد نظمی دیکھنے میں آئی۔اس دوران پولیس نے وکلا پر ڈنڈے برسادیئے جس سے ایک وکیل کا سر پھٹ گیا جس کے باعث صورتحال مزید بگڑ کر کمرہ عدالت تک جا پہنچی۔احتساب عدالت کے جج محمد بشیر شریف خاندان کے خلاف تین ریفرنسز کی سماعت کے لئے کمرہ عدالت میں آئے تو اس موقع پر وکلا نے شور شرابا شروع کردیا۔کمرہ عدالت میں بدنظمی اور ہلڑ بازی کے باعث معزز جج نشست سے اٹھ کر چلے گئے اور تینوں ملزمان نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) محمد صفدر پر فرد جرم عائد نہ کی جاسکی اور سماعت 19 اکتوبر تک کے لئے ملتوی کردی گئی۔سابق وزیراعظم نواز شریف اہلیہ کلثوم نواز کی علالت کے باعث لندن میں موجود ہیں جن کی عدم موجودگی کے باعث ظافر خان بطور نمائندہ احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔ سماعت کے موقع پر دیگر ملزمان مریم نواز اور کیپٹن (ر) محمد صفدر بھی کمرہ عدالت میں موجود تھے۔مریم نواز سمدھی چوہدری منیر کی رہائشگاہ سے پیشی کے لئے روانہ ہوئیں تو ان کے ہمراہ پرویز رشید، آصف کرمانی اور وزیرمملکت برائے اطلاعات مریم اورنگزیب بھی تھیں۔ پیشی کے بعدمریم نواز نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا عدالت میں وکلا اور اہلکاروں کے درمیان جو کچھ ہوا افسوسناک ہے۔ انہوں نے کہا وکلا کو اجازت تھی لیکن عدالت کے اندر نہیں آنے دیا گیا، وزارت داخلہ آج کے واقعہ کی تحقیقات کرائے۔ واضع رہے کہ عدالت نے گزشتہ سماعت پر لندن میں رہائش پذیر حسن نواز اور حسین نواز کو مفرور ملزم قرار دے کر ان کا کیس الگ کردیا تھا جب کہ دونوں ملزمان کو بذریعہ اشتہار پیش ہونے کا حکم جاری کیا گیا۔ملزمان کی لاہور میں رہائش گاہ اور احاطہ عدالت میں چسپاں کیے گئے اشتہار میں لکھا ہے کہ دونوں ایک ماہ کے اندر عدالت کے سامنے پیش نہ ہوئے تو انہیں اشتہاری ملزم قرار دے دیا جائے گا، اس اشتہار کی اشاعت کے بعد کسی بھی مرحلے پر جائیداد ضبطی کی کارروائی بھی شروع کی جا سکتی ہے۔ دوسری جانب اسلام آباد ہائی کورٹ نے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی جانب سے فرد جرم عائد کرنے کی کارروائی کے خلاف درخواست نمٹاتے ہوئے قرار دیا ہے کہ پہلے متعلقہ فورم سے رجوع کریں۔سپریم کورٹ کے پاناما کیس سے متعلق 28 جولائی کے فیصلے کی روشنی میں نیب نے شریف خاندان کے خلاف 3 ریفرنسز احتساب عدالت میں دائر کئے ہیں جو ایون فیلڈ پراپرٹیز، العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ انویسمنٹ سے متعلق ہے۔نیب کی جانب سے ایون فیلڈ اپارٹمنٹس ریفرنس میں سابق وزیراعظم نواز شریف ان کے بچوں حسن، حسین ، بیٹی مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر کو ملزم ٹھہرایا ہے۔العزیزیہ اسٹیل ملز جدہ اور 15 آف شور کمپنیوں سے متعلق فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنس میں نواز شریف اور ان کے دونوں بیٹوں حسن اور حسین نواز کو ملزم نامزد کیا گیا ہے۔سابق وزیراعظم نواز شریف نیب ریفرنس کا سامنا کرنے کے لئے دو مرتبہ 26 ستمبر اور 2 اکتوبر کو ذاتی حیثیت میں احتساب عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔اسلام آباد کی احتساب عدالت نے رواں ماہ 2 اکتوبر کو ہونے والی سماعت کے دوران پیش نہ ہونے پر نواز شریف کے صاحبزادوں حسن نواز، حسین نواز اور داماد کیپٹن (ر) محمد صفدر کے ناقابلِ ضمانت وارنٹ جبکہ مریم نواز کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔رواں ماہ 9 اکتوبر کو کیپٹن (ر) محمد صفدر اپنی اہلیہ کے ہمراہ قطر ایئرویز کی پرواز کے ذریعے جب لندن سے اسلام آباد پہنچے تو وہاں پہلے سے موجود نیب حکام نے انہیں ایئرپورٹ سے گرفتار کرلیا جبکہ مریم نواز کو جانے کی اجازت دے دی گئی تھی۔بعدازاں نیب ٹیم نے کیپٹن صفدر کو احتساب عدالت میں پیش کیا جبکہ مریم نواز خود عدالت پہنچیں۔سماعت کے بعد احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے کیپٹن (ر) صفدر اور مریم نواز کی ضمانت 50 لاکھ روپے کے علیحدہ علیحدہ ضمانتی مچلکوں کے عوض منظور کرلی تھی جبکہ نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر پر فردِ جرم عائد کرنے کے لیے 13 اکتوبر کی تاریخ مقرر کی گئی تھی۔دوسری جانب سابق وزیراعظم کے صاحبزادوں حسن اور حسین نواز کا مقدمہ دیگر افراد سے علیحدہ کرتے ہوئے انہیں اشتہاری قرار دے دیا گیا تھا۔گذشتہ روز کیپٹن (ر) صفدر نے نیب ریفرنس کے سلسلے میں احتساب عدالت کی جانب سے فرد جرم عائد کرنے کی تاریخ مقرر کرنے کے حکم نامے کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی تھی، جسے ناقابل سماعت قرار دے کر خارج کردیا گیا تھا۔( عا مر عبا سی )#/s#

About Admin

Check Also

کراچی میں تخریب کاری کا منصوبہ ناکام ، 2 دہشت گرد گرفتار

نیوکراچی صنعتی ایریا میں پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے مبینہ طور پر کالعدم تحریک طالبان …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: