Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / صحت / بھولنے کی بیماری کو مت بھولیں!!

بھولنے کی بیماری کو مت بھولیں!!

اسلام آباد — الزائمر ایک ایسا دماغی مرض ہے جو لاعلاج ہے۔ لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ مرض کی ابتدائی علامات ظاہر ہونے پر اگر بروقت تشخیص اور علاج شروع کر دیا جائے تو اس بیماری کے بڑھنے کی رفتار کو قابلِ ذکر حد تک سست کیا جا سکتا ہے۔

ایک اندازے کے مطابق الزائمر کی ابتدائی شکل ڈیمنشیا (نسیان) دنیا بھر میں ایک بڑھتا ہوا مرض ہے جس کے مریضوں کی تعداد تقریباً پانچ کروڑ ہے۔

لیکن ماہرین کے مطابق 2050ء تک اس مرض سے متاثرہ افراد تعداد تین گنا تک بڑھ سکتی ہے۔

گو کہ پاکستان میں اس مرض میں مبتلا افراد کے مستند اعداد و شمار دستیاب نہیں، لیکن دماغی صحت سے متعلق کام کرنے والی مختلف تنظیموں اور ماہرین کا اندازہ ہے کہ ملک میں اس بیماری کے شکار مریضوں کی تعداد 10 لاکھ سے زائد ہوسکتی ہے۔

دماغی صحت اور اس کے بارے میں شعور و آگاہی فراہم کرنے والی ایک موقر غیر سرکاری تنظیم “نیورولوجی اویئرنیس اینڈ ریسرچ فاؤنڈیشن” کے جنرل سیکرٹری اور معروف نیورولوجسٹ ڈاکٹر عبدالمالک نے بدھ کو وائس آف امریکہ سے گفتگو میں بتایا کہ اس بات کی اشد ضرورت ہے کہ لوگوں کو اس مرض کی ابتدائی علامات پر غور کرنے کی طرف راغب کیا جائے۔

ڈیمنشیا (نسیان) جسے عرف عام میں بھولنے کی بیماری بھی کہا جاتا ہے، کی ابتدائی علامات بتاتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اس میں انسان کے معمولاتِ زندگی، مزاج اور رویے میں چھوٹی چھوٹی تبدیلیاں آنے لگتی ہیں جن پر اگر توجہ نہ دی جائے تو آگے چل کر یہ مرض خطرناک صورت اختیار کرتے ہوئے الزائمر میں تبدیل ہوجاتا ہے جو کہ لاعلاج مرض ہے۔

About Admin

Check Also

pakistan  Electricity

نیپرا نے بجلی کی قیمت کم کردی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) نیپرا نے حکومتی درخواست مسترد کرکے بجلی کی قیمت میں 2 روپے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: